تازہ ترین
کشمیر دنیا کا سب سے بڑا قید خانہ اور کراچی کچرا کنڈیبھارتی خفیہ ایجنسی ’’را‘‘ میڈیا سے کتراتی ہے؟پی ٹی آئی حکومت نے نواز شریف کی بے گناہی کو بالواسطہ تسلیم کرلیامقبوضہ کشمیر: بھارت کو ایک اور جھٹکا دینے کی پاکستانی تیاریوکٹ ٹیکر سری لنکن اسپنر کا بالنگ ایکشن رپورٹپاکستان میں فوجی سربراہان کی تاریخکولیشن سپورٹ فنڈ بند کیا تو پاکستان سے تعلقات بہتر ہوئے۔ ٹرمپبھارتی فوج نے کشمیر میں کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کو بھی اٹھا لیا’’انٹرنیشنل کرمنل کورٹ میں کشمیریوں کی نسل کشی کا مقدمہ لڑا جائے‘‘جنریشن گیپ ایک معاشرتی ناسورکشمیر میں بدترین مظالم پر عالمی برادری کو ہوش آگیانماز پر پابندی بھارت کی دیگر ریاستوں تک جا پہنچیبھارتی ٹینس ایسوسی ایشن کا پاکستان میں ڈیوس کپ کھیلنے سے انکارحکومتی عدم توجہی سے سی پیک منصوبے متاثر ہونے لگےسرکاری سعودی آئل کمپنی کی بھارت میں بھاری سرمایہ کاری’’مسلم اکثریت کے باعث کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کی گئی‘‘تعلق کے دوہرے معیار سے نجات!وادی میں لاک ڈاؤن۔ ہزاروں کشمیری نمازِ عید ادا نہیں کر پائےیومِ آزادی پر چوری شدہ نغمے کا استعمال 35اے اور 370 کی تنسیخ۔ جسٹس وجیہہ نے حکومت کو قانونی راستہ دکھادیا

پاکستانی 360 ارب روپے کی عیدی بانٹنے کیلئے تیار

پاکستانیوں کے پاس کتنی عیدی ہے؟ اسٹیٹ بینک نے تفصیل جاری کردی
  • واضح رہے
  • جون 4, 2019
  • 3:56 صبح

عید الفطر کے موقع پر ملک بھر کے 142 شہروں میں ایس ایم ایس سروس کے ذریعے 360 ارب روپے کے نئے کرنسی نوٹ فراہم کئے گئے ہیں۔

عیدالفطر 2019ء کے موقع پر نئے کرنسی نوٹوں کے اجرا کے حوالے سے اسٹیٹ بینک نے اعداد و شمار جاری کر دئیے ہیں۔ اسٹیٹ بینک کے اعلامیے کے مطابق بینک دولت پاکستان نے اپنے ذیلی ادارے ایس بی پی بینکنگ سروسز کارپوریشن (ایس بی پی بی ایس سی) کے 16 فیلڈ دفاتر کے ذریعے لاکھوں شہریوں کو مجموعی طور پر 360 ارب روپے کے نئے کرنسی نوٹ فراہم کئے۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق 100 روپے اور اس سے کم مالیتوں کے 61 ارب روپے کے نئے کرنسی نوٹ بھی اس میں شامل ہیں، جو بینکوں کے کیش کاؤنٹرز اور اور ایس ایم ایس سروس (8877) کے ذریعے عوام کو رمضان المبارک کے دوران فراہم کئے گئے۔

مرکزی بینک نے بتایا ہے کہ 61 ارب روپے میں سے 54 ارب روپے ایس ایم ایس سروس کے ذریعے جاری کیے گئے۔ یہ سہولت 142 شہروں میں کمرشل بینکوں کی 1700 سے زائد برانچوں اور ایس بی پی بی ایس سی کے 16 فیلڈ دفاتر پر دستیاب تھی۔ اس سروس سے عیدالفطر سے قبل 30 لاکھ سے زائد افراد نے استفادہ کیا۔

’’واضح رہے‘‘ کو معلوم ہوا ہے کہ اسٹیٹ بینک کی ایس ایم ایس سروس کے باوجود سیکڑوں افراد نئے کرنسی نوٹوں سے محروم رہے۔ کئی شہریوں نے نئے کرنسی نوٹوں کیلئے اپلائی کیا تو انہیں ’’ہاؤس فل‘‘ کی وجہ سے نئے نوٹ نہیں مل سکے۔ بہت سے شہریوں نے ایک بار ناکامی کے بعد متعدد مرتبہ کوشش کی اور 8877 پر ایس ایم ایس بھیجا، لیکن انہیں نئے کرنسی نوٹ جاری نہیں ہو سکے۔

واضح رہے کہ ایک ایس ایم ایس 1.50 روپے علاوہ ٹیکس تھا، جس سے اسٹیٹ بینک کے بقول 30 لاکھ پاکستانیوں نے نئے کرنسی نوٹ نکلوائے۔ یوں ایس ایم ایس سروس سے بھی حکومت نے چارجز کی مد میں بھاری رقوم حاصل کیں۔