تازہ ترین
سابق آمر مشرف کو آئین توڑنے پر سزائے موت کا حکمپی ٹی آئی رکن پنجاب اسمبلی نے 37 ایکڑ زمین ہتھیالی’’سارے پاکستان میں ملک ریاض جیسی مافیا سرگرم ہے‘‘اوورسیز پاکستانیوں کی قانونی معاونت کیلئے ادارہ بنانے کا فیصلہاظہر علی ٹیسٹ اور بابر ٹی ٹوئنٹی کپتان مقرر۔ سرفراز فارغمولانا فضل الرحمان کا دھرنے کا اعلان۔ کنٹینرز بھی بنوالئےالیکشن کمیشن ارکان کے مستقبل کا فیصلہ ہونے کے قریبزلزلے سے اموات کی تعداد 38 ہوگئی۔ سینکڑوں افراد بے یارو مددگاربائیو میٹرک تصدیق کے باوجود بینک اکاؤنٹس آپریشنل نہ ہونیکی شکایاتملکی تاریخ میں پہلی بار مرغی 400 روپے کی ہوگئیگستاخ ٹیچر نوتن لعل کو قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہنارتھ کراچی صنعتی ایریا میں ڈاکوؤں کا راجپنجاب حکومت نے ایڈز کنٹرول پروگرام کے فنڈز روک لئےافغانستان میں این ڈی ایس کمپاؤنڈ کے قریب دھماکہ۔ 30 ہلاکافغان طالبان کے حملے تیز۔ غنی حکومت کیلئے الیکشن درد سر بن گیاپولیسٹر فلامنٹ یارن پر دوبارہ ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کئے جانے کا امکانسیاسی قیدیوں کو ڈیل پر مجبور کرنے کیلئے بلیک میلنگ شروعوفاق میں ساری ٹیم مشرف کی ہے۔ رضا ربانیپی ٹی آئی حکومت کے خاتمے کیلئے نواز شریف کا بڑا فیصلہسنسرشپ کا سامنا کرنے والے ممالک میں پاکستان کا 39واں نمبر

پاکستانی 360 ارب روپے کی عیدی بانٹنے کیلئے تیار

پاکستانیوں کے پاس کتنی عیدی ہے؟ اسٹیٹ بینک نے تفصیل جاری کردی
  • واضح رہے
  • جون 4, 2019
  • 3:56 صبح

عید الفطر کے موقع پر ملک بھر کے 142 شہروں میں ایس ایم ایس سروس کے ذریعے 360 ارب روپے کے نئے کرنسی نوٹ فراہم کئے گئے ہیں۔

عیدالفطر 2019ء کے موقع پر نئے کرنسی نوٹوں کے اجرا کے حوالے سے اسٹیٹ بینک نے اعداد و شمار جاری کر دئیے ہیں۔ اسٹیٹ بینک کے اعلامیے کے مطابق بینک دولت پاکستان نے اپنے ذیلی ادارے ایس بی پی بینکنگ سروسز کارپوریشن (ایس بی پی بی ایس سی) کے 16 فیلڈ دفاتر کے ذریعے لاکھوں شہریوں کو مجموعی طور پر 360 ارب روپے کے نئے کرنسی نوٹ فراہم کئے۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق 100 روپے اور اس سے کم مالیتوں کے 61 ارب روپے کے نئے کرنسی نوٹ بھی اس میں شامل ہیں، جو بینکوں کے کیش کاؤنٹرز اور اور ایس ایم ایس سروس (8877) کے ذریعے عوام کو رمضان المبارک کے دوران فراہم کئے گئے۔

مرکزی بینک نے بتایا ہے کہ 61 ارب روپے میں سے 54 ارب روپے ایس ایم ایس سروس کے ذریعے جاری کیے گئے۔ یہ سہولت 142 شہروں میں کمرشل بینکوں کی 1700 سے زائد برانچوں اور ایس بی پی بی ایس سی کے 16 فیلڈ دفاتر پر دستیاب تھی۔ اس سروس سے عیدالفطر سے قبل 30 لاکھ سے زائد افراد نے استفادہ کیا۔

’’واضح رہے‘‘ کو معلوم ہوا ہے کہ اسٹیٹ بینک کی ایس ایم ایس سروس کے باوجود سیکڑوں افراد نئے کرنسی نوٹوں سے محروم رہے۔ کئی شہریوں نے نئے کرنسی نوٹوں کیلئے اپلائی کیا تو انہیں ’’ہاؤس فل‘‘ کی وجہ سے نئے نوٹ نہیں مل سکے۔ بہت سے شہریوں نے ایک بار ناکامی کے بعد متعدد مرتبہ کوشش کی اور 8877 پر ایس ایم ایس بھیجا، لیکن انہیں نئے کرنسی نوٹ جاری نہیں ہو سکے۔

واضح رہے کہ ایک ایس ایم ایس 1.50 روپے علاوہ ٹیکس تھا، جس سے اسٹیٹ بینک کے بقول 30 لاکھ پاکستانیوں نے نئے کرنسی نوٹ نکلوائے۔ یوں ایس ایم ایس سروس سے بھی حکومت نے چارجز کی مد میں بھاری رقوم حاصل کیں۔