تازہ ترین
وفاق میں ساری ٹیم مشرف کی ہے۔ رضا ربانیپی ٹی آئی حکومت کے خاتمے کیلئے نواز شریف کا بڑا فیصلہسنسرشپ کا سامنا کرنے والے ممالک میں پاکستان کا 39واں نمبردورہ پاکستان کیلئے سری لنکا کی بے بی ٹیم کا اعلانبھارت کشمیر سے کرفیو کیوں نہیں اٹھا رہا؟ پاکستانی حکومت غافلجنوبی افریقہ: ہر 3 گھنٹے میں ایک عورت قتل کردی جاتی ہےعدلیہ نے ملک کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا۔ حشمت حبیبپنجاب پولیس کی حراست میں 17 افراد کی ہلاکت کا انکشافافغان جنگ کو مزید طول دینے کیلئے امریکہ کی قلابازیعالمی شہرت یافتہ لیگ اسپنر عبدالقادر انتقال کر گئےیوٹیوب پر نفرت کا اظہار 52 فیصد بڑھ گیاپی ٹی آئی حکومت کا پہلا سال ’’مہنگائی کا سال‘‘ قرارروشنی بکھیرنے والے پودے تیارشہید مرسی کے چھوٹے بیٹے کو دل کا دورہ۔ انتقال کرگئےبھارتی زعم کی تقویت ہماری معاشرتی تنزلیپی بی آئی ایف کا شرح سود کو سنگل ڈیجٹ پر لانے کا مطالبہمصباح کا پروفیشنلزم پر زورمصباح کو ہیڈ کوچ۔ چیف سلیکٹر کی دوہری ذمہ داری مل گئیپاکستانی تربیت یافتہ کمانڈوز دیش میں داخل ہوگئے۔ بھارت کا نیا شوشہرانا ثناء اللہ کو مزید جیل میں رکھنے کا نیازی منصوبہ

کراچی کے تاجر۔ ادبی۔ معزز شخصیات ملکی معاشی صورتحال پر فکرمند

کراچی کے تاجر۔ ادبی۔ معزز شخصیات ملکی معاشی صورتحال پر فکرمند
  • واضح رہے
  • اگست 27, 2019
  • 5:59 شام

مفکرینِ پاکستان کی جانب سے وطن عزیز کو معاشی بحران سے نکالنے کیلئے حکومت کو اہم تجاویز ارسال کی جائیں گی۔

کراچی -- کراچی کے تاجروں، ادبی و معزز شخصیات نے ملک میں جاری معاشی بحران پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ملک کو معاشی بحران سے نکالنے کے لیے حکومت کو اہم تجاویزد دینے پر اتفاق کیا ہے، جو باہمی مشاورت کے بعد حکومت کو ارسال کی جائیں گی۔

حکومت کو تجاویز ارسال کرنے کا فیصلہ مفکرین ِ پاکستان کے ماہانہ اجلاس میں کیا گیا جس میں سابق گورنر سندھ جنرل (ر) معین الدین حیدر،سابق چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ جسٹس وجیہہ الدین احمد، سابق کمشنر کراچی شفیق الرحمان پراچہ،کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی کسٹم سب کمیٹی کے چیئرمین وسیم الرحمان،سابق چیئرمین بورڈ آف انٹرمیڈیٹ ایجوکیشن کراچی پروفیسر انوار احمد زئی،دوست محمد فیضی، میاں ارشاد،عابد خان،شکیل الرحمان، جمیل احمد غزنوی، ڈاکٹر جاوید منظر، جسٹس ( ر) حاذق الخیری، برگیڈیئر(ر) پروفیسر ڈاکٹر نسیم اے خان،چیئرمین سی این جی ڈیلرز ایسوسی ایشن عبدالسمیع خان، محمد رئیس و دیگر شریک تھے۔

اجلاس میں ملک کے موجودہ حالات اور باہمی امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا اور وطن عزیز کی ترقی و خوشحالی کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کیا گیا جبکہ تمام شرکاء سے درخواست کی گئی کہ وہ ملک کو معاشی مشکلات سے نکالنے کیلئے آئندہ اجلاس میں اپنی تجاویز پیش کریں جو باہمی مشاورت کے بعد وفاقی حکومت کو بھیجی جائیں گی تاکہ ملک اقتصادی طور پر مستحکم ہوسکے۔