تازہ ترین
سیاسی قیدیوں کو ڈیل پر مجبور کرنے کیلئے بلیک میلنگ شروعوفاق میں ساری ٹیم مشرف کی ہے۔ رضا ربانیپی ٹی آئی حکومت کے خاتمے کیلئے نواز شریف کا بڑا فیصلہسنسرشپ کا سامنا کرنے والے ممالک میں پاکستان کا 39واں نمبردورہ پاکستان کیلئے سری لنکا کی بے بی ٹیم کا اعلانبھارت کشمیر سے کرفیو کیوں نہیں اٹھا رہا؟ پاکستانی حکومت غافلجنوبی افریقہ: ہر 3 گھنٹے میں ایک عورت قتل کردی جاتی ہےعدلیہ نے ملک کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا۔ حشمت حبیبپنجاب پولیس کی حراست میں 17 افراد کی ہلاکت کا انکشافافغان جنگ کو مزید طول دینے کیلئے امریکہ کی قلابازیعالمی شہرت یافتہ لیگ اسپنر عبدالقادر انتقال کر گئےیوٹیوب پر نفرت کا اظہار 52 فیصد بڑھ گیاپی ٹی آئی حکومت کا پہلا سال ’’مہنگائی کا سال‘‘ قرارروشنی بکھیرنے والے پودے تیارشہید مرسی کے چھوٹے بیٹے کو دل کا دورہ۔ انتقال کرگئےبھارتی زعم کی تقویت ہماری معاشرتی تنزلیپی بی آئی ایف کا شرح سود کو سنگل ڈیجٹ پر لانے کا مطالبہمصباح کا پروفیشنلزم پر زورمصباح کو ہیڈ کوچ۔ چیف سلیکٹر کی دوہری ذمہ داری مل گئیپاکستانی تربیت یافتہ کمانڈوز دیش میں داخل ہوگئے۔ بھارت کا نیا شوشہ

وکٹ ٹیکر سری لنکن اسپنر کا بالنگ ایکشن رپورٹ

وکٹ ٹیکر سری لنکن اسپنر کا بالنگ ایکشن رپورٹ
  • واضح رہے
  • اگست 20, 2019
  • 3:17 شام

گال ٹیسٹ کے دوران نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیم سن نے بھی کچھ اوورز کرائے تھے، جس پر ایمپائرز کو ان کا بالنگ ایکشن بھی مشکوک لگا

سری لنکا کو گال ٹیسٹ جتوانے میں اہم کردار ادا کرنے والے لیگ اسپنر اکیلا دننجایا پر مشکوک ایکشن کے باعث معطلی کے خطرات منڈلانے لگے ہیں۔ یہ 10 ماہ میں دوسری بار ہے کہ اکیلا دننجایا کا بالنگ ایکشن رپورٹ ہوا ہے، جس کے باعث وہ پابندی بھی بھگت چکے ہیں۔ گال ٹیسٹ میں ہی نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیم سن جو کہ ایک پارٹ ٹائم بالر ہیں، کا بالنگ ایکشن بھی رپورٹ ہوا ہے۔
کرکٹ ویب سائٹ کے مطابق اکیلا دننجایا کو ایک بار پھر بائیو مکینکس ٹیسٹ کے عمل سے گزارا جائے گا اور اگر اس بار بھی تجزیے میں ان کے بازو کا خم 15 ڈگری سے زائد رہا تو ان کے بین الاقوامی اور ڈومیسٹک کرکٹ میں بالنگ کرانے پر پابندی ہوگی۔

واضح رہے کہ گزشتہ برس بھی انہیں مشکوک ایکشن کے باعث معطل کر دیا گیا تھا، جس کے بعد دننجایا نے اپنے بالنگ ایکشن کو درست کیا اور آسٹریلیا کے شہر برسبین میں قائم بائیو مکینکس لیب سے ایکشن کلیئرنس کا سرٹیفکیٹ حاصل کیا تھا، جس کے بعد سے وہ مسلسل سری لنکن ٹیم کا حصہ رہے۔ تاہم اب ایک بار پھر انہیں ٹیم میں جگہ بنانے کی فکر پڑ گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق گال ٹیسٹ میں کین ولیم سن نے بھی تین اوورز کرائے، جو ان کے گلے پڑ گئے ہیں۔ اس سے قبل 2014 میں بھی کین ولیم سن کا بالنگ ایکشن مشکوک ہونے کی وجہ سے رپورٹ ہوا تھا۔