تازہ ترین
اوورسیز پاکستانیوں کی قانونی معاونت کیلئے ادارہ بنانے کا فیصلہاظہر علی ٹیسٹ اور بابر ٹی ٹوئنٹی کپتان مقرر۔ سرفراز فارغمولانا فضل الرحمان کا دھرنے کا اعلان۔ کنٹینرز بھی بنوالئےالیکشن کمیشن ارکان کے مستقبل کا فیصلہ ہونے کے قریبزلزلے سے اموات کی تعداد 38 ہوگئی۔ سینکڑوں افراد بے یارو مددگاربائیو میٹرک تصدیق کے باوجود بینک اکاؤنٹس آپریشنل نہ ہونیکی شکایاتملکی تاریخ میں پہلی بار مرغی 400 روپے کی ہوگئیگستاخ ٹیچر نوتن لعل کو قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہنارتھ کراچی صنعتی ایریا میں ڈاکوؤں کا راجپنجاب حکومت نے ایڈز کنٹرول پروگرام کے فنڈز روک لئےافغانستان میں این ڈی ایس کمپاؤنڈ کے قریب دھماکہ۔ 30 ہلاکافغان طالبان کے حملے تیز۔ غنی حکومت کیلئے الیکشن درد سر بن گیاپولیسٹر فلامنٹ یارن پر دوبارہ ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کئے جانے کا امکانسیاسی قیدیوں کو ڈیل پر مجبور کرنے کیلئے بلیک میلنگ شروعوفاق میں ساری ٹیم مشرف کی ہے۔ رضا ربانیپی ٹی آئی حکومت کے خاتمے کیلئے نواز شریف کا بڑا فیصلہسنسرشپ کا سامنا کرنے والے ممالک میں پاکستان کا 39واں نمبردورہ پاکستان کیلئے سری لنکا کی بے بی ٹیم کا اعلانبھارت کشمیر سے کرفیو کیوں نہیں اٹھا رہا؟ پاکستانی حکومت غافلجنوبی افریقہ: ہر 3 گھنٹے میں ایک عورت قتل کردی جاتی ہے

وفاق میں ساری ٹیم مشرف کی ہے۔ رضا ربانی

وفاق میں ساری ٹیم مشرف کی ہے۔ رضا ربانی
  • واضح رہے
  • ستمبر 13, 2019
  • 3:15 شام

سابق چیئرمین سینیٹ نے کراچی کو صوبہ بنانے کی سازش بے نقاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی ٹی آئی حکومت فوری طور پر مستعفی ہوجائے

پیپلز پارٹی کے رہنما رضا ربانی نے کہا ہے کہ وفاق کی جانب سے کراچی کے معاملات سنبھالنے کا تاثر غیر آئینی ہے۔ آئین کے تحت صوبائی خود مختاری پر ضرب نہیں لگائی جا سکتی۔ وفاق صوبوں کو صرف تجاویز دے سکتا ہے۔ معاشی صورتحال پر تو وفاق کو خود پر آرٹیکل 149 کا اطلاق کرنا چاہیئے۔ ملک کے معاشی حالات بہت خراب ہیں۔ ایسی صورت میں ہم پی ٹی آئی حکومت سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سندھ کے عوام کراچی کی تقسیم برداشت نہیں کریں گے۔ اگر سندھ کو تقسیم کرنے کا سوچا گیا تو اس کے سنگین نتائج ہوں گے۔ مسئلہ کوڑا کرکٹ کا نہیں بلکہ کراچی کے کنٹرول سنبھالنے کا ہے۔ وفاقی حکومت کراچی کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لینا چاہتی ہے۔ تاہم یہ ممکن نہیں ہے۔ وفاق نے 18ویں ترمیم کے ذریعے صوبوں کو خود مختار بنایا۔ ماضی میں صوبے کا کنٹرول سنبھالا جا سکتا تھا۔

سابق چیئرمین سینیٹ نے انکشاف کیا کہ یہ سارا معاملہ کراچی کو صوبہ بنانے کی حکمت عملی کا حصہ ہے۔ حکومت آہستہ آہستہ حالات کو اس طرف لے کر جا رہی ہے۔ میں یہ پوچھتا ہوں کہ آپ کسی بیرونی ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں۔ حکومت کو ہوش کے ناخن لینے چاہئیں۔ کراچی کو صوبہ بنانے کی سازش کبھی کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ دشمن ممالک چاہتے ہیں کہ ملک میں ایک بار پھر نسل پرستانہ فسادات شروع ہوں۔ ہمیں خطے کی صورتحال کو بھی دیکھنا چاہیئے۔

رضا ربانی نے پی ٹی آئی حکومت کو آڑھے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ ہمیں یہ دیکھنا چاہیئے کہ وفاق میں جو ٹیم بیٹھی ہے وہ سابق آمر مشرف کی ٹیم ہے۔ لہٰذا کچرے کو جواز بناکر کراچی کو سندھ سے الگ کرنے کا یہ پہلا قدم ہے۔ مسئلہ اختیارات کا نہیں بلکہ پیسے کا ہے۔