تازہ ترین
مولانا فضل الرحمان کا دھرنے کا اعلان۔ کنٹینرز بھی بنوالئےالیکشن کمیشن ارکان کے مستقبل کا فیصلہ ہونے کے قریبزلزلے سے اموات کی تعداد 38 ہوگئی۔ سینکڑوں افراد بے یارو مددگاربائیو میٹرک تصدیق کے باوجود بینک اکاؤنٹس آپریشنل نہ ہونیکی شکایاتملکی تاریخ میں پہلی بار مرغی 400 روپے کی ہوگئیگستاخ ٹیچر نوتن لعل کو قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہنارتھ کراچی صنعتی ایریا میں ڈاکوؤں کا راجپنجاب حکومت نے ایڈز کنٹرول پروگرام کے فنڈز روک لئےافغانستان میں این ڈی ایس کمپاؤنڈ کے قریب دھماکہ۔ 30 ہلاکافغان طالبان کے حملے تیز۔ غنی حکومت کیلئے الیکشن درد سر بن گیاپولیسٹر فلامنٹ یارن پر دوبارہ ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کئے جانے کا امکانسیاسی قیدیوں کو ڈیل پر مجبور کرنے کیلئے بلیک میلنگ شروعوفاق میں ساری ٹیم مشرف کی ہے۔ رضا ربانیپی ٹی آئی حکومت کے خاتمے کیلئے نواز شریف کا بڑا فیصلہسنسرشپ کا سامنا کرنے والے ممالک میں پاکستان کا 39واں نمبردورہ پاکستان کیلئے سری لنکا کی بے بی ٹیم کا اعلانبھارت کشمیر سے کرفیو کیوں نہیں اٹھا رہا؟ پاکستانی حکومت غافلجنوبی افریقہ: ہر 3 گھنٹے میں ایک عورت قتل کردی جاتی ہےعدلیہ نے ملک کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا۔ حشمت حبیبپنجاب پولیس کی حراست میں 17 افراد کی ہلاکت کا انکشاف

گستاخ ٹیچر نوتن لعل کو قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہ

Justice
  • واضح رہے
  • ستمبر 19, 2019
  • 8:22 شام

پولیس رپورٹ کرنے والے طالب علم محمد ابتسام، ان کے والد اور دیگر مسلمانوں کے گھروں کا محاصرہ ختم کرے ورنہ ملک گیر احتجاج کریں گے۔ جمعیت اہلحدیث پاکستان

جمعیت اہلحدیث پاکستان و جمعیت یوتھ فورتھ و جمعیت طلباء اہلحدیث کا مشترکہ ہنگامی اجلاس مرکز اہلحدیث میں چیف آرگنائزر مولانا محمد یوسف سلفی کی زیر صدارت منعقد ہوا، جس میں گھوٹکی میں ہندو ٹیچر نوتن لعل کی طرف سے گستاخی رسول کرنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس واقعے کی سخت الفاظ میں مذمت کی گئی اور حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ ہندو ٹیچر نوتن لعل کو تحفظ دینے کی بجائے اسے قرار واقعی سزا دی جائے۔ اور آئین پاکستان کے تحت گستاخ رسول کا مقدمہ چلایا جائے۔

مولانا محمد یوسف سلفی نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت گستاخ نوتن لعل کو تحفظ دینے کیلئے پولیس کے روایتی ہتھکنڈوں کے ذریعے فریق مسلمانوں کو دبا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ فوری طور پر توہین رسالت کے اس واقعے کا از خود نوٹس لے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت جو کہ ہندوؤں کو رام کرنے کیلئے سرگرم رہتی ہے اب گستاخ نوتن لعل کو تحفظ دینے کی کوشش کر رہی ہے۔

اجلاس میں تمام مذہبی و سیاسی جماعتوں کے آل پارٹیز کانفرنس بلانے کا فیصلہ کیا گیا، جس میں آئندہ کا لائحہ عمل مرتب کیا جائے گا۔ جبکہ ایک قرارداد کے ذریعے واقعے کی رپورٹ کرنے والے طالب علم محمد ابتسام اور ان کے ساتھیوں سے مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے آئی جی سندھ کو کہا گیا کہ وہ انہیں فول پروف سیکورٹی فوری طور پر مہیا کریں ورنہ حالات کی تمام تر ذمہ داری آئی جی سندھ پر عائد ہوگی۔